April 13, 2024

Warning: sprintf(): Too few arguments in /www/wwwroot/station57.net/wp-content/themes/chromenews/lib/breadcrumb-trail/inc/breadcrumbs.php on line 253
Republican presidential candidate and former U.S. President Donald Trump gestures as he holds a campaign rally at Coastal Carolina University ahead of the South Carolina Republican presidential primary in Conway, South Carolina, U.S., February 10, 2024. REUTERS/Sam Wolfe

انتخابی مہم کے سب سے پہلے مرحلے ابتدائی نامزدگیوں میں ممکنہ صدارتی امیدواروں نے توجہ مبذول کر لی۔ ڈونلڈ ٹرمپ اپنی پارٹی پر گرفت مضبوط کر رہے ہیں۔ ہفتہ کے روز ڈونلڈ ٹرمپ اور نکی ہیلی جنوبی کیرولینا میں آمنے سامنے ہوں گے۔

ہیلی 2017 میں اقوام متحدہ کی سفیر بننے سے پہلے پالومیٹو ریاست کی گورنر تھیں۔ تاہم پالومیٹو میں ڈونلڈ ٹرمپ کو دو تہائی کی حمایت حاصل ہے۔ دونوں انتخابی امیدواروں کے درمیان دوڑ کے ساتھ ساتھ بیان بازی کی گولہ باری بھی تیز ہوگئی ہے۔

نکی ہیلی

نکی ہیلی

راک ہل میں انتخابی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا آپ نے اپنی زندگی کا سب سے اہم ووٹ ڈالنے جا رہے ہیں اور یہ ووٹ ایمانداری سے ڈالنا ہے۔ ڈونلڈ ٹرمپ یہ ظاہر کر رہے ہیں کہ وہ نکی ہیلی سے بہت آگے جا چکے ہیں اور ان کا فوکس اب نومبر میں ہونے والے صدارتی انتخابات پر ہے۔

نکی ہیلی ڈونلڈ ٹرمپ سے بھی زیادہ قدامت پسند حکومت اور خارجہ پالیسی کی حامی ہیں۔ اگرچہ اس بارے میں شہرت زیادہ ڈونلڈ ٹرمپ کی مانی جاتی ہے۔ وہ اس سے پہلے ٹرمپ کے مقابلے میں چار نامزدگیوں میں ہار گئی ہیں۔

ایک ووٹر کا کہنا تھا وہ سمجھتا ہے کہ نکی ہیلی اس عہدے کے لیے فی الحال نہیں آرہی ہیں لیکن اس کے باوجود وہ ووٹ کا استعمال ان لوگوں کے ذریعے کرے گا جو اس سے مختلف رائے رکھتے ہیں۔

دونوں امیدواروں میں پارٹی فنڈز کے حصول اور استعمال کے لیے بھی مقابلے کی فضا پائی جاتی ہے اور ان فنڈز کا بہتر استعمال کرنے کے لیے اپنے ووٹرز اور حامیوں کو یقین دہانی کرا رہے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *