April 20, 2024

Warning: sprintf(): Too few arguments in /www/wwwroot/station57.net/wp-content/themes/chromenews/lib/breadcrumb-trail/inc/breadcrumbs.php on line 253
Smoke billows following reported Turkish warplane raids, from a site in the Matin Mountains near the village of Koherzi in the Amadiyah district, northeast of Dohuk in the Kurdish autonomous region of Iraq, on April 28th 2022. Turkey on April 18 said it has launched an air and ground offensive against militants of the outlawed Kurdistan Workers' Party (PKK) in northern Iraq. (Photo by AFP)

دو عراقی سیکورٹی ذرائع نے جمعہ کو بتایا کہ شمالی عراق کے صوبہ دوہوک کے پہاڑی علاقے شیلادیز میں ترکیہ کے فضائی حملے میں دو شہری ہلاک ہو گئے ہیں۔

ترکیہ کی وزارتِ دفاع نے کہا کہ اس کی افواج نے شمالی عراق اور شمالی شام میں رات بھر دو فضائی حملے کیے جس میں عراق میں چھ اور شام میں سات جنگجو مارے گئے۔ سوشل میڈیا پلیٹ فارم ایکس پر اس کی پوسٹ نے مزید معلومات فراہم نہیں کیں۔

وزارت نے یہ نہیں بتایا کہ حملوں میں کن علاقوں کو نشانہ بنایا گیا اور یہ واضح نہیں ہے کہ آیا وزارت شمالی عراق میں ہونے والے اسی واقعے کا حوالہ دے رہی ہے جن کی اطلاع سکیورٹی ذرائع نے دی ہے۔

ہمسایہ ملک عراق میں کالعدم کردستان ورکرز پارٹی (پی کے کے) جو بنیادی طور پر شمالی عراق کے پہاڑی علاقے میں واقع ہے، ترکیہ اس کے خلاف اپنے حملے کے حصے کے طور پر باقاعدگی سے فضائی حملے اور سرحد پار کارروائیاں کرتا ہے۔

پی کے کے جسے ترکیہ، امریکہ اور یورپی یونین نے دہشت گرد گروپ قرار دیا تھا، نے 1984 میں ترکیہ کے خلاف ہتھیار اٹھا لیے تھے۔ لڑائی میں 40,000 سے زیادہ لوگ ہلاک ہو چکے ہیں۔

ترکیہ نے شامی کرد وائی پی جی ملیشیا کے خلاف شمالی شام میں کئی فوجی کارروائیوں اور بمباری کی مہم بھی چلائی ہے جسے وہ پی کے کے کی ایک شاخ قرار دیتا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *